Saroona to khuzdar

سارونہ سے خضدار تک بلیک ٹاپ روڈ نہ ہونے کی وجہ سے مسافر شدید مشکلات شکار ہے علاقے سے خضدار یا صوبے کے دیگر شہروں تک مریضوں کو منتقل کرتے ہوئے اکثر مریض دوران سفر زندگی کی بازی ہار جاتے ہیں حکومتی عدم دلچسپی منتخب نمائندوں کی لاپرواہی سے سارونہ کے عوام اذیتوں کا شکار ہے

رپورٹ جاوید خدرانی عوامی مسائل  سارونہ
مسافروں مریضوں کو مشکلات کا سامنا تفصیلات کے مطابق سارونہ ٹو خضدار روڈ مختلف جگہوں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں اور ناقابل سفر ہیں جسکی وجہ سے بڑی چھوٹی گاڑیوں کے نچلے حصے لگ جاتے ہیں اور لوگوں کے قیمتی گاڑیان نہ صرف ضائع ہورہی ہیں بلکہ شہری ذہنی اذیت کا بھی شکار ہیں مریضوں کو شدید مشکلات کاسامنا کرنا پڑہ رہا ہے 4 گھنٹے کا سفر میں کئ گھنٹے لگ جاتے جسکی وجہ سے اکثر بیشتر مریض زندگی کی بازی ہار جاتے ہیں سارونہ ٹو خضدار کیلئے روزانہ کی بنیاد پر ایک بس جاتے ہے وہ راستہ خراب ہونے کی وجہ سے ناقابل سفر ہے کئی گھنٹوں تک خراب ہوتے ہیں اس دور جدید میں لوگ کہاں تک پہنچ گے لیکن سارونہ کے عوام کو ایک روڈ نہیں مل سکتا ہے نمائندگان  کی عدم دلچسپی ہے
عرصہ دراز سے سڑک کی مرمت نہیں ہوئ روڈ اب سفر کرنے کے قابل نہ رہا اس روڈ کی جگہ نئے بلیک ٹاپ روڈ تعمیر کرنے کی ضرورت ہے سارونہ ٹو خضدار تک سڑک ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہوکر کھنڈر کا منظر پیش کر رہے ہیں جسکی وجہ سے مسافروں اور ٹرانسپورٹ والوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑہ رہا سارونہ سے خضدار تک کا سفر عوام کےلۓ ایک ناسور بن گیا ہے حکومت بلوچستان ایم پی اے ایم ایں اے صاحبان سے پرزور اپیل ہے کہ
روڈ کو گریڈنگ کرکے مسافروں کو مشکلات سے بچایا جاے عوامی حلقوں نے اپیل کی ہے کہ روڑ کی تعمیر اور مرمت کے لئے اقدامات کئے جائیں تاکہ مسافر اور ٹرانسپورٹر مزید مشکلات سے بچیں

No comments

Powered by Blogger.